(Bal-e-Jibril-002) (اگر کج رو ہیں انجم, آسمان تیرا ہے یا میرا) Agar Kaj Ro Hain Anjum, Asman Tera Hai Ya Mera

اگر کج رو ہیں انجم، آسماں تیرا ہے یا میرا مجھے فکر جہاں کیوں ہو، جہاں تیرا ہے یا میرا؟ کج رو: ٹیڑھا چلنا۔

If the stars are astray, the heavens are Thine, not mine. Why should I fret about the world? The world is Thine, not mine.

اگر ہنگامہ ہائے شوق سے ہے لامکاں خالی خطا کس کی ہے یا رب! لامکاں تیرا ہے یا میرا؟

If Thy world is cold, devoid of the warmth of passion; whose fault is it, my Lord? That world is Thine, not mine.

اسے صبح ازل انکار کی جرات ہوئی کیونکر مجھے معلوم کیا، وہ راز داں تیرا ہے یا میرا؟

How dared he defy Thee, at the dawn of life? It was he who was Thy confidant; it is Thy secret, not mine.

محمد بھی ترا، جبریل بھی، قرآن بھی تیرا مگر یہ حرف شیریں ترجماں تیرا ہے یا میرا؟ حرف شيريں: میٹھے الفاظ، اشارہ ہے اپنی شاعری کی طرف۔

The apostle is Thine, and Gabriel, and so is the Holy Word, but whose life does the Holy Word concern? Is it Thine or mine?

اسی کوکب کی تابانی سے ہے تیرا جہاں روشن زوال آدم خاکی زیاں تیرا ہے یا میرا؟ اسي کوکب: اسی ستارے، مراد ہے انسان۔

Man is the star that brightens Thy lonely, desolate world; will the eclipse of this star be a loss of Thine or mine?

ترے شیشے میں مے باقی نہیں ہے بتا، کیا تو مرا ساقی نہیں ہے سمندر سے ملے پیاسے کو شبنم بخیلی ہے یہ رزاقی نہیں ہے

All potent wine is emptied of Thy cask; art Thou, indeed, a Cup’s bearer, may I ask? Thou gavest me a drop from an ocean; Art Thou a miser in a Nourisher’s mask?

[Translated by Naim Siddiqui]

%d bloggers like this:
search previous next tag category expand menu location phone mail time cart zoom edit close