(Zarb-e-Kaleem-028) (افرنگ زدہ) Afrang Zada

افرنگ زدہ

ترا وجود سراپا تجلی افرنگ
کہ تو وہاں کے عمارت گروں کی ہے تعمیر


مگر یہ پیکر خاکی خودی سے ہے خالی
فقط نیام ہے تو، زرنگار و بے شمشیر

تجلي افرنگ: یورپ کی چمک
زرنگار: سونے کے نقش والی۔

تری نگاہ میں ثابت نہیں خدا کا وجود
مری نگاہ میں ثابت نہیں وجود ترا

وجود کیا ہے، فقط جوہر خودی کی نمود
کر اپنی فکر کہ جوہر ہے بے نمود ترا

English Translation:

افرنگ زدہ

ترا وجود سراپا تجلی افرنگ
کہ تو وہاں کے عمارت گروں کی ہے تعمیر

مگر یہ پیکر خاکی خودی سے ہے خالی
فقط نیام ہے تو، زرنگار و بے شمشیر

تجلي افرنگ: یورپ کی چمک
زرنگار: سونے کے نقش والی۔
BEWITCHED BY THE WEST
Your being whole from head to foot reflects the West; her masons in you have shown their art at best.
Devoid of Self, your frame from clay and water made is like a spangled sheath that has no steel or blade.

تری نگاہ میں ثابت نہیں خدا کا وجود
مری نگاہ میں ثابت نہیں وجود ترا

وجود کیا ہے، فقط جوہر خودی کی نمود
کر اپنی فکر کہ جوہر ہے بے نمود ترا

In God’s existence you don’t believe, you have no existence, I conceive.
Life means to bring Self’s merits hid to show, take heed, your Self is quite devoid of glow.
[Translated by Syed Akbar Ali Shah]

Roman urdu:

Afrang Zada
(1)

Tera Wujood Sarapa Tajali-e-Afrang
Ke Tu Wahan Ke Amarat Garon Ki Hai Tameer

Magar Ye Paidar-e-Khaki Khudi Se Hai Khali
Faqat Nayam Hai Tu, Zar Nigar-o-Beshamsheer!

(2)

Tera Nigah Mein Sabit Nahin Khuda Ka Wujood
Meri Nigah Mein Sabit Nahin Wujood Tera

Wujood Kya Hai, Faqat Johar-e-Khudi Ki Namood
Kar Apni Fikar Ke Johar Hai Be Namood Tera

Dr. Allama Muhammad Iqbal r.a

%d bloggers like this:
search previous next tag category expand menu location phone mail time cart zoom edit close