(Zarb-e-Kaleem-062) (مرد مسلمان) Mard-e-Musalman

مرد مسلمان

ہرلحظہ ہے مومن کی نئی شان، نئی آن
گفتار میں، کردار میں، اللہ کی برہان!
برہان: نشان، حجت۔
قہاری و غفاری و قدوسی و جبروت
یہ چار عناصر ہوں تو بنتا ہے مسلمان
قہاری: جس سے دشمن ڈر جائے ۔
غفار: بادشاہ، خطا کاروں سے درگزر کرنے والا۔
قدوسی: کردار کی پاکیزگی والا۔
جبروت: عظمت اور بزرگی والا۔
ہمسایہء جبریل امیں بندئہ خاکی
ہے اس کا نشیمن نہ بخارا نہ بدخشان

یہ راز کسی کو نہیں معلوم کہ مومن
قاری نظر آتا ہے، حقیقت میں ہے قرآن!

قدرت کے مقاصد کا عیار اس کے ارادے
دنیا میں بھی میزان، قیامت میں بھی میزان

جس سے جگر لالہ میں ٹھنڈک ہو، وہ شبنم
دریاوں کے دل جس سے دہل جائیں، وہ طوفان

فطرت کا سرود ازلی اس کے شب و روز
آہنگ میں یکتا صفت سورئہ رحمن

بنتے ہیں مری کارگہ فکر میں انجم
لے اپنے مقدر کے ستارے کو تو پہچان

English Translation:

مرد مسلمان

ہرلحظہ ہے مومن کی نئی شان، نئی آن
گفتار میں، کردار میں، اللہ کی برہان!
برہان: نشان، حجت۔
A MUSLIM
A Muslim true gets grandeur new with moment’s change and every hour; by words and deeds he gives a proof of Mighty God, His reach and power.
قہاری و غفاری و قدوسی و جبروت
یہ چار عناصر ہوں تو بنتا ہے مسلمان
قہاری: جس سے دشمن ڈر جائے ۔
غفار: بادشاہ، خطا کاروں سے درگزر کرنے والا۔
قدوسی: کردار کی پاکیزگی والا۔
جبروت: عظمت اور بزرگی والا۔
To rout the foes, to grant them reprieve, do pious deeds and show great might are four ingredients that make a Muslim Devout who shuns not fight.
ہمسایہء جبریل امیں بندئہ خاکی
ہے اس کا نشیمن نہ بخارا نہ بدخشان

With Gabriel trusted and steadfast this clay-born man has kinship close, a dwelling in some land or clime for himself Muslim never chose.
یہ راز کسی کو نہیں معلوم کہ مومن
قاری نظر آتا ہے، حقیقت میں ہے قرآن!

This secret yet none has grasped that Muslim Scripture reads so sweet practising rules by it prescribed, becomes its pattern quite complete.
قدرت کے مقاصد کا عیار اس کے ارادے
دنیا میں بھی میزان، قیامت میں بھی میزان

The Faithful acts on aims and ends that Nature keeps before its sight in world he sifts the good and bad, in future shall judge wrong and right.
جس سے جگر لالہ میں ٹھنڈک ہو، وہ شبنم
دریاوں کے دل جس سے دہل جائیں، وہ طوفان

While dealing with friends and mates, he is dew that thirst of tulip slakes: When engaged with his foes in fight, like torrent strong makes rivers shake.
فطرت کا سرود ازلی اس کے شب و روز
آہنگ میں یکتا صفت سورئہ رحمن

The charm of Nature’s eternal song in Muslim’s life, no doubt is found like chapter Rahman of the Koran, is full of sweet melodious sound.
بنتے ہیں مری کارگہ فکر میں انجم
لے اپنے مقدر کے ستارے کو تو پہچان

Such thoughts that shine like lustrous stars my brain, like workshop, can provide, you can select the star you like, so that your Fate this star may guide.
(Translated by Syed Akbar Ali Shah)

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: