(Zarb-e-Kaleem-069) (موت) Mout

موت

لحد میں بھی یہی غیب و حضور رہتا ہے
اگر ہو زندہ تو دل ناصبور رہتا ہے
غیب و حضور: محبوب حقیقی سے دوری اور اس کا دیدار۔
مہ و ستارہ، مثال شرارہ یک دو نفس
مے خودی کا ابد تک سرور رہتا ہے

فرشتہ موت کا چھوتا ہے گو بدن تیرا
ترے وجود کے مرکز سے دور رہتا ہے

English Translation:

موت

لحد میں بھی یہی غیب و حضور رہتا ہے
اگر ہو زندہ تو دل ناصبور رہتا ہے
غیب و حضور: محبوب حقیقی سے دوری اور اس کا دیدار۔
If Self of man perfection gains devoid of rest his heart remains, even in the niche of grave Presence and Absence he must brave.
مہ و ستارہ، مثال شرارہ یک دو نفس
مے خودی کا ابد تک سرور رہتا ہے

The Moon and stars shine like a spark, for moments few and then the dark; the rapture caused by Ego’s wine is as eternal as things divine.
فرشتہ موت کا چھوتا ہے گو بدن تیرا
ترے وجود کے مرکز سے دور رہتا ہے

If your Ego is ripe and mature, your life from Death becomes secure: Death’s angel may earthly frame contact, but can not harm your soul, in fact.
(Translated by Syed Akbar Ali Shah)

%d bloggers like this:
search previous next tag category expand menu location phone mail time cart zoom edit close