دگرگون کشور ہندوستان است

(1)
دگرگون کشور ہندوستان است
دگرگون آن زمین و آسمان است
مجو از ما نماز پنجگانہ
غلامان را صف آرائی گران است
ہندوستان کی ولایت بدل رہی ہے، کہاں کے زمین و آسمان بدل رہے ہیں۔
ہم سے پانچ وقت کی نماز کی امید نہ رکھ، محکوموں کے لیے صف آرائی گراں ہے۔
ز محکومی مسلمان خود فروش است
گرفتار طلسم چشم و گوش است
ز محکومی رگان در تن چنان سست
کہ ما را شرع و آئین بار دوش است
غلامی نے مسلمان کو خود فراموش بنا دیا ہے، وہ آنکھ اور کان (مادی دنیا ) کے فریب میں گرفتار ہے۔
غلامی کے باعث ہمارے بدن کی رگیں ایسی سست ہو چکی ہیں، کہ شریعت اور دین (جو سفر حیات کو آسان بناتے ہیں) ہمارے لیے بار دوش بنے ہوئے ہیں۔

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: