(Armaghan-e-Hijaz-32) (تمام عارف و عامی خودی سے بیگانہ) Tamam Arif-o-Aami Khudi Se Begana

تمام عارف و عامی خودی سے بیگانہ

تمام عارف و عامی خودی سے بیگانہ
کوئی بتائے یہ مسجد ہے یا کہ میخانہ
عارف: خدا کی پہچان کرنے والا۔
عامی: عام لوگ۔
یہ راز ہم سے چھپایا ہے میر واعظ نے
کہ خود حرم ہے چراغ حرم کا پروانہ
میر واعظ: بڑا وعظ کرنے والا۔
چراغ حرم: حرم کا چراغ ؛ مراد ہے اللہ تعالے سے محبت کرنے والا مسلمان۔
طلسم بے خبری، کافری و دیں داری
حدیث شیخ و برہمن فسون و افسانہ
فسون و افسانہ: خیالی کہانی۔
نصیب خطہ ہو یا رب وہ بندۂ درویش
کہ جس کے فقر میں انداز ہوں کلیمانہ

چھپے رہیں گے زمانے کی آنکھ سے کب تک
گہر ہیں آب ولر کے تمام یک دانہ
ولر : کشمیر کی مشہور جھیل۔

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: