(Bal-e-Jibril-087) (ہر اک ذرے میں ہے شاید مکیں دل) Har Ek Zarre Mein Hai Shaid Makeen Dil

ہر اک ذرے میں ہے شاید مکیں دل

ہر اک ذرے میں ہے شاید مکیں دل
اسی جلوت میں ہے خلوت نشیں دل
اسیر دوش و فردا ہے و لیکن
غلام گردش دوراں نہیں دل

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: