(Bal-e-Jibril-131) (ملا اور بہشت) Mullah Aur Bahisht

ملااور بہشت

میں بھی حاضر تھا وہاں، ضبط سخن کر نہ سکا
حق سے جب حضرت ملا کو ملا حکم بہشت

عرض کی میں نے، الہی! مری تقصیر معاف
خوش نہ آئیں گے اسے حور و شراب و لب کشت

نہیں فردوس مقام جدل و قال و اقول
بحث و تکرار اس اللہ کے بندے کی سرشت
قال و اقول: جھگڑا۔
جدل: لڑائی۔
ہے بد آموزی اقوام و ملل کام اس کا
اور جنت میں نہ مسجد، نہ کلیسا، نہ کنشت!
بد آموزي: بری تعلیم دینا۔
کنشت: بتخانہ۔
ملل: ملّت کی جمع۔

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: