(Bal-e-Jibril-133) (ال ارض اللہ) Al-Ardullah !

الارض للہ

پالتا ہے بیج کو مٹی کو تاریکی میں کون
کون دریاوں کی موجوں سے اٹھاتا ہے سحاب؟
سحاب: بھاپ، بادل۔
کون لایا کھینچ کر پچھم سے باد سازگار
خاک یہ کس کی ہے، کس کا ہے یہ نور آفتاب؟
باد سازگار: موافق ہوا۔
کس نے بھردی موتیوں سے خوشہء گندم کی جیب
موسموں کو کس نے سکھلائی ہے خوئے انقلاب؟

دہ خدایا! یہ زمیں تیری نہیں، تیری نہیں
تیرے آبا کی نہیں، تیری نہیں، میری نہیں
دہ خدایا: گاؤں کا مالک، زمیندار۔
آبا: باپ دادا۔

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: