(Bal-e-Jibril-135) (نصیحت) Nasihat

نصیحت

بچہء شاہیں سے کہتا تھا عقاب سالخورد
اے تیرے شہپر پہ آساں رفعت چرخ بریں
سالخورد: بوڑھا۔
ہے شباب اپنے لہو کی آگ میں جلنے کا نام
سخت کوشی سے ہے تلخ زندگانی انگبیں
انگبیں: شہد، میٹھا۔
تلخ: کڑوا۔
جو کبوتر پر جھپٹنے میں مزا ہے اے پسر!
وہ مزا شاید کبوتر کے لہو میں بھی نہیں

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: