(Bal-e-Jibril-156) (حال و مقام) Haal-o-Maqam

حال ومقام

دل زندہ و بیدار اگر ہو تو بتدریج
بندے کو عطا کرتے ہیں چشم نگراں اور
حال: ذہنی، روحانی اور اخلاقی کیفیت۔
مقام: درجہ، مرتبہ۔
احوال و مقامات پہ موقوف ہے سب کچھ
ہر لحظہ ہے سالک کا زماں اور مکاں اور
سالک: راہ حق کا مسافر۔
الفاظ و معانی میں تفاوت نہیں لیکن
ملا کی اذاں اور مجاہد کی اذاں اور
تفاوت: فرق۔
پرواز ہے دونوں کی اسی ایک فضا میں
کرگس کا جہاں اور ہے، شاہیں کا جہاں اور
کرگس: گدھ۔

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: