(Bal-e-Jibril-175) (آزادی افکار) Azadi-e-Afkar

آزادی افکار

جو دونی فطرت سے نہیں لائق پرواز
اس مرغک بیچارہ کا انجام ہے افتاد
مرغک: پرندہ۔
دوني فطرت: فطرت کی پستی۔
ہر سینہ نشیمن نہیں جبریل امیں کا
ہر فکر نہیں طائر فردوس کا صےاد
طائر فردوس: جنت کا پرندہ۔
اس قوم میں ہے شوخی اندیشہ خطرناک
جس قوم کے افراد ہوں ہر بند سے آزاد

گو فکر خدا داد سے روشن ہے زمانہ
آزادی افکار ہے ابلیس کی ایجاد

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: