(Bang-e-Dra-180) (ہم مشرق کے مسکینوں کا دل مغرب میں جا اٹکا ہے) Hum Mashriq Ke Maskeenon Ka Dil Maghrib Mein Ja Atka Hai

ہم مشرق کے مسکینوں کا دل مغرب میں جا اٹکا ہے

ہم مشرق کے مسکینوں کا دل مغرب میں جا اٹکا ہے
واں کنڑ سب بلوری ہیں یاں ایک پرانا مٹکا ہے

اس دور میں سب مٹ جائیں گے، ہاں! باقی وہ رہ جائے گا
جو قائم اپنی راہ پہ ہے اور پکا اپنی ہٹ کا ہے

اے شیخ و برہمن، سنتے ہو! کیا اہل بصیرت کہتے ہیں
گردوں نے کتنی بلندی سے ان قوموں کو دے پٹکا ہے

یا باہم پیار کے جلسے تھے، دستور محبت قائم تھا
یا بحث میں اردو ہندی ہے یا قربانی یا جھٹکا ہے

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: