(Bang-e-Dra-200) (مسجد تو بنا دی شب بھر میں ایمان کی حرارت والوں نے) Masjid To Bana Di Shab Bhar Mein Iman Ki Hararat Walon Ne

مسجد تو بنا دی شب بھر میں ایماں کی حرارت والوں نے

مسجد تو بنا دی شب بھر میں ایماں کی حرارت والوں نے

من اپنا پرانا پاپی ہے، برسوں میں نمازی بن نہ سکا

کیا خوب امیر فیصل کو سنوسی نے پیغام دیا

تو نام و نسب کا حجازی ہے پر دل کا حجازی بن نہ سکا

تر آنکھیں تو ہو جاتی ہیں، پر کیا لذت اس رونے میں

جب خون جگر کی آمیزش سے اشک پیازی بن نہ سکا

اقبال بڑا اپدیشک ہے من باتوں میں موہ لیتا ہے

گفتارکا یہ غازی تو بنا،کردار کا غازی بن نہ سکا

اپديشک: اچھا واعظ۔ اچھا مشیر۔

Comments are closed.

Blog at WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: