(Bang-e-Dra-076) (کوسش نا تمام) Koshish-e-Natamam

کوشش ناتمام فرقت آفتاب میں کھاتی ہے پیچ و تاب صبح چشم شفق ہے خوں فشاں اختر شام کے لیے رہتی ہے قیس روز کو لیلی شام کی ہوس اختر صبح مضطرب تاب دوام کے لیے کہتا تھا قطب آسماں قافلہ نجوم سے ہمرہو، میں ترس گیا لطف خرام کے لیے سوتوں کو ندیوں کا... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-075) (عاشق ہرجائی) Ashiq-e-Harjai

عا شق ہر جائی (1) ہے عجب مجموعہء اضداد اے اقبال تو رونق ہنگامہء محفل بھی ہے، تنہا بھی ہے مجموعہء اضداد: ایسے اوصاف کا مجموعہ جو ایک دوسرے کی ضد ہوں۔ تیرے ہنگاموں سے اے دیوانہ رنگیں نوا! زینت گلشن بھی ہے، آرائش صحرا بھی ہے ہم نشیں تاروں کا ہے تو رفعت پرواز... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-074) (سلیمی) Sulema

سلیمی جس کی نمود دیکھی چشم ستارہ بیں نے خورشید میں، قمر میں، تاروں کی انجمن میں چشم ستارہ بیں: ماہر فلکیات۔ نمود: ظہور۔ صوفی نے جس کو دل کے ظلمت کدے میں پایا شاعر نے جس کو دیکھا قدرت کے بانکپن میں ظلمت کدہ: اندھیری جگہ۔ جس کی چمک ہے پیدا، جس کی مہک... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-073) (وصال) Wisal

وصال جستجو جس گل کی تڑپاتی تھی اے بلبل مجھے خوبی قسمت سے آخر مل گیا وہ گل مجھے خود تڑپتا تھا، چمن والوں کو تڑپاتا تھا میں تجھ کو جب رنگیں نوا پاتا تھا، شرماتا تھا میں میرے پہلو میں دل مضطر نہ تھا، سیماب تھا ارتکاب جرم الفت کے لیے بے تاب تھا... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-072) (چاند اور تارے) Chand Aur Tare

چاند اور تارے ڈرتے ڈرتے دم سحر سے تارے کہنے لگے قمر سے نظارے رہے وہی فلک پر ہم تھک بھی گئے چمک چمک کر کام اپنا ہے صبح و شام چلنا چلنا چلنا، مدام چلنا بے تاب ہے اس جہاں کی ہر شے کہتے ہیں جسے سکوں، نہیں ہے رہتے ہیں ستم کش سفر... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-071) (کلی) Kali

کلی جب دکھاتی ہے سحر عارض رنگیں اپنا کھول دیتی ہے کلی سینہء زریں اپنا عارض رنگیں: خوبصورت رخسار۔ جلوہ آشام ہے صبح کے مے خانے میں زندگی اس کی ہے خورشید کے پیمانے میں جلوہ آشام: جلوہ پینے والا یعنی جلوے سے فائدہ اٹھانے والا۔ سامنے مہر کے دل چیر کے رکھ دیتی ہے... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-070)  (کی گود میں بلی دیکھ کر) …. Ki Gode Mein Billi Dekh Kar

ــــــــ کی گود میں بلی دیکھ کر تجھ کو دزدیدہ نگاہی یہ سکھا دی کس نے رمز آغاز محبت کی بتا دی کس نے ہر ادا سے تیری پیدا ہے محبت کیسی نیلی آنکھوں سے ٹپکتی ہے ذکاوت کیسی دیکھتی ہے کبھی ان کو، کبھی شرماتی ہے کبھی اٹھتی ہے، کبھی لیٹ کے سو جاتی... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-069) (حسن و عشق) Husn-o-Ishq

حسن و عشق جس طرح ڈوبتی ہے کشتی سیمین قمر نور خورشید کے طوفان میں ہنگام سحر جسے ہو جاتا ہے گم نور کا لے کر آنچل چاندنی رات میں مہتاب کا ہم رنگ کنول جلوہ طور میں جیسے ید بیضائے کلیم موجہ نکہت گلزار میں غنچے کی شمیم ہے ترے سیل محبت میں یونہی... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-068) (اختر صبح) Akhtar-e-Subah

اختر صبح ستارہ صبح کا روتا تھا اور یہ کہتا تھا ملی نگاہ مگر فرصت نظر نہ ملی ہوئی ہے زندہ دم آفتاب سے ہر شے اماں مجھی کو تہ دامن سحر نہ ملی بساط کیا ہے بھلا صبح کے ستارے کی نفس حباب کا، تابندگی شرارے کی کہا یہ میں نے کہ اے زیور... Continue Reading →

(Bang-e-Dra-067) (طلبہ علی گڑھ کالج کے نام) Talaba’ay Ali Garh College Ke Naam

طلبہء علی گڑھ کالج کے نام اوروں کا ہے پیام اور، میرا پیام اور ہے عشق کے درد مند کا طرز کلام اور ہے اوروں: مراد ہے اہل دانش۔ پیام: مراد ہے عشق کا پیغام۔ طائر زیر دام کے نالے تو سن چکے ہو تم یہ بھی سنو کہ نالہء طائر بام اور ہے زیر... Continue Reading →

Blog at WordPress.com.

Up ↑